نواز شریف کا نام ای سی ایل سے خارج کرنے کی درخواست، وفاقی حکومت کا جواب جمع

نواز شریف کا نام ای سی ایل سے خارج کرنے کی درخواست، وفاقی حکومت کا جواب جمع

لاہور ہائیکورٹ میں سابق وزیراعظم نواز شریف کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ سے خارج کرنے سے متعلق دائر درخواست پر وفاقی حکومت نے عدالت میں اپنا جواب جمع کروا دیا ہے۔

جسٹس علی باقر نجفی اور جسٹس سردار احمد نعیم پر مشتمل بنچ نے درخواست پر سماعت کی۔ وفاقی حکومت اور قومی احتساب بیورو (نیب) نے اپنے تحریری جواب میں عدالتی دائرہ اختیار کو چیلنج کیا، جواب میں کہا گیا ہے کہ لاہور ہائیکورٹ کو درخواست کی سماعت کا اختیار نہیں۔

وفاقی حکومت نے تحریری جواب میں انڈیمنٹی بانڈ کے بغیر نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی مخالفت کی اور شہباز شریف کی درخواست مسترد کرنے اور انڈیمنٹی بانڈ کی شرط لاگو رکھنے کی استدعا کی۔ نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی مشروط اجازت کے خلاف مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کی جانب سے لاہور ہائیکورٹ میں گزشتہ روز جمعرات کو درخواست دائر کی گئی تھی۔

درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا کہ کیس کو سماعت کے لئے آج ہی مقرر کیا جائے جسے عدالت عالیہ کی جانب سے منظور کر لیا گیا اور سماعت جسٹس باقر نجفی کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے کی۔ گزشتہ روز ایڈیشنل اٹارنی جنرل کی جانب سے ایک روز کی مہلت طلب کرنے پر عدالت نے سماعت اگلے روز تک ملتوی کردی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں