مشرف غداری کیس: اسلام آباد ہائیکورٹ نے خصوصی عدالت کو فیصلہ سنانے سے روک دیا

مشرف غداری کیس: اسلام آباد ہائیکورٹ نے خصوصی عدالت کو فیصلہ سنانے سے روک دیا

اسلام آباد ہائی کورٹ نے خصوصی عدالت کو سابق صدر پرویز مشرف کے خلاف سنگین غداری کیس کا فیصلہ سنانے سے روک دیا ہے۔

سابق صدر پرویز مشرف کے خلاف سنگین غداری کیس کا فیصلہ خصوصی عدالت نے 28 نومبر کو سنانا تھا تاہم وزارت داخلہ نے خصوصی عدالت کا فیصلہ روکنے کے لئے اسلام آباد ہائی کورٹ میں درخواست دائر کی گئی تھی جسے منظور کر لیا گیا ہے۔ اطہر من اللہ نے دوران سماعت ریمارکس دیئے کہ تین نومبر کی ایمرجنسی کا ہدف عدلیہ تھی جب کہ اکتوبر 1999ء کے اقدامات کو بھی غیر آئینی قرار دیا جا چکا ہے، حکومت اس حوالے سے الگ شکایت داخل کیوں نہیں کراتی۔

ایڈیشنل اٹارنی جنرل ساجد الیاس بھٹی عدالت میں پیش ہوئے اور انہوں نے عدالت کو بتایا کہ اس حوالے سے ابھی کوئی فیصلہ نہیں ہوا تاہم سنگین غداری کیس کے ٹرائل کے لئے خصوصی عدالت کی تشکیل کا ریکارڈ عدالت میں پیش کر دیا گیا ہے اور اس میں چیف جسٹس آف پاکستان کی مشاورت سے ججز کی تقرری ہوتی رہی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں