آرمی چیف ملازمت توسیع معاملہ، کیس کا فیصلہ محفوظ

آرمی چیف ملازمت توسیع معاملہ، کیس کا فیصلہ محفوظ

سپریم کورٹ آف پاکستان نے بری فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدت ملازمت میں توسیع سے متعلق کیس کا فیصلہ محفوظ کرلیا ہے۔

چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے تین رکنی بنچ کی صدارت کی۔ عدالت آج کیس کا مختصر فیصلہ سنادے گی۔ چیف جسٹس پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں جسٹس منصور علی شاہ اور جسٹس مظہر میاں خیل پر مشمل تین رکنی بینچ نے سماعت کی جب کہ اٹارنی جنرل پاکستان انور منصور خان اور آرمی چیف کے وکیل فروغ نسیم نے عدالت میں دلائل دیے۔

سماعت شروع ہوئی تو چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے اٹارنی جنرل انورمنصور سے استفسار کیا جنرل کیانی کی مدت ملازمت میں توسیع کےکاغذات اور جنرل راحیل شریف کی ریٹائرمنٹ کیسےہوئی کاغذات بھی منگوالیں ، آپ نے کل فرمایا جنرل کبھی ریٹائرڈ نہیں ہوتا، بتایا جائے راحیل شریف نے اپنا عہدہ کیسے چھوڑا۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ جنرل ریٹائرڈ نہیں ہوتے تو انہیں پنشن بھی نہیں ملتی ہوگی، آپ دستاویزات منگوالیں تو15 منٹ بعدکیس سن لیتے ہیں، اس دوران ہم دیگرکیسزسن لیتے ہیں۔ بعد ازایں سماعت میں 15 منٹ کا وقفہ کردیا گیا۔ وقفے کے بعد مزید سوال جواب کئے گئے اور فیصلہ محفوظ کر لیا گیا-

اپنا تبصرہ بھیجیں