چینی زبان سیکھیئے

نی ہاؤ…سلام

عوامی جمہوریہ چین میں چینی زبان کی متعدد اقسام رائج ہیں، جن میں سب سے زیادہ مقبول مینڈرین ہے، جسے ”حان یو” بھی کہا جاتا ہے۔ چینی زبان میں حروف تہجی نہیں ہوتے، بلکہ یہ کریکٹرز پر مشتمل ہے، جنہیں مقامی زبان میں ”حان ز” کہا جاتا ہے۔ یہ کریکٹر دراصل مختلف تصاویر اور اشکال ہیں جنہیں آسان اور عام فہم بنانے کیلئے لکیروں میں ڈھالا گیا ہے۔
چینی زبان کے لہجے میں چار مختلف ٹونز شامل ہیں، جنہیں عرف عام میں پہلی، دوسری، تیسری اور چوتھی ٹون کہا جاتا ہے۔ بہت سے کریکٹرز کی آواز ایک جیسی ہونے کے باوجود ٹون تبدیل کرنے سے ان کا مفہوم بھی تبدیل ہو جاتا ہے۔ مثلاً اگر چینی لفظ ”نار” کو تیسری ٹون کے ساتھ بولا جائے تو اس کا مطلب ہے ”کہاں”، لیکن اگر اسی لفظ ”نار” کو چوتھی ٹون کے ساتھ بولا جائے تو مفہوم ”وہاں” ہو جاتا ہے۔ یوں تو چینی زبان کے کریکٹرز کی تعداد کئی ہزار ہے، لیکن چینی زبان بولنے میں روانی حاصل کرنے کیلئے 3 سے 4 ہزار بنیادی کریکٹر بمعہ ٹون یاد کرنا ضروری ہے، نہ صرف یہ، بلکہ صرف 250 کریکٹر سیکھ کر بھی آپ چینی زبان میں اپنا مدعا باآسانی بیان کر سکتے ہیں۔
جو لوگ چینی زبان کے کریکٹرز سے واقف نہیں، ان کے لئے چینی زبان کو رومن یعنی انگریزی میں لکھنے کی سہولت بھی موجود ہے، تاکہ اسے آسانی سے پڑھا، بولا اور سمجھا جا سکے۔ اس اندازِ تحریر کو ”پھن ین” کہا جاتا ہے، جس میں چینی زبان بولنے کیلئے درکار چاروں ٹونز کیلئے مخصوص نشانات کو بھی واضح کیا جاتا ہے۔ پھن ین میں ٹون کا ہمیشہ واول کے اوپر لکھا جاتا ہے۔

مزید چینی اسباق سیکھنے کے لئے یہاں کلک کیجیئے

اپنا تبصرہ بھیجیں