پاکستان اور آسٹریلیا کے درمیان دبئی ٹیسٹ سنسنی خیز مقابلے کے بعد ڈرا ہوگیا!

پاکستان اور آسٹریلیا کے مابین پہلا دبئی ٹیسٹ میچ سنسنی خیز مقابلے کے بعد بغیر کسی نتیجے کے ختم ہو گیا۔ پاکستان کو آخری روز میچ جیتنے کے لئے 7 وکٹیں درکار تھیں، تاہم آسٹریلوی ٹیم دفاعی انداز اپناتے ہوئے ٹیسٹ کو بے نتیجہ ختم کرنے میں کامیاب رہی۔ پاکستان کے 462 رنز کے ہدف کے تعاقب میں آسٹریلیا نے میچ کے آخری روز 8 وکٹوں کے نقصان پر 362 رنز بنائے۔

عثمان خواجہ 141 رنز کی شاندار اننگز کھیلنے کے بعد آؤٹ ہوئے۔ عثمان خواجہ کے بعد یاسر شاہ نے مچل اسٹارک اور پیٹر سڈل کو بھی جلد پویلین کی راہ دکھائی تاہم آسٹریلیا کے ٹم پین اور نیتھن لیون نے نویں وکٹ پر انتہائی دفاعی انداز اپنایا اور مزید کوئی نقصان نہیں ہونے دیا۔
پانچویں اور آخری روز کا کھیلا شروع ہوا تو عثمان خواجہ 50 اور ٹریوس ہیڈ 34 رنز کے ساتھ کریز پر موجود تھے، دونوں بلے بازوں نے 132 رنز کی شراکت قائم کی۔ ٹیم کا مجموعی اسکور 219 تک پہنچا تو ٹریوس ہیڈ 72 رنز بنا کر محمد حفیظ کا شکار بن گئے جس کے بعد آنے والے نئے بلے باز لیبسچگنی بھی 13 رنز کے مہمان ثابت ہوئے۔
پاکستان کی جانب سے دوسری اننگز میں یاسر شاہ نے 4، محمد عباس نے 3 اور محمد حفیظ نے ایک وکٹ حاصل کی۔ محمد عباس نے میچ میں مجموعی طور پر 7 وکٹیں حاصل کیں۔ آسٹریلوی بیٹسمین عثمان خواجہ کو میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔ اس کے جواب میں آسٹریلیا کی ٹیم اپنی پہلی اننگز میں 202 رنز بناکر آؤٹ ہوگئی تھی۔ محمد عباس نے 4 اور بلال آصف نے 6 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا تھا۔ پاکستان نے آسٹریلیا کو فالو آن کرانے کے بجائے دوسری اننگز شروع کردی تھی۔ دوسری اننگز پاکستان نے 6 وکٹوں پر 181 رنز بناکر ڈکلیئر کردی تھی اور یوں آسٹریلیا کو جیت کے لیے 462 رنز کا ٹارگٹ ملا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

twenty − six =