سیمنٹ ساز فیکٹریوں کو زیرزمین پانی کی قیمت ادا کرنا ہوگی، چیف جسٹس آف پاکستان!

چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں عدالت عظمیٰ کے 3 رکنی بینچ نے کہا ہے کہ سیمنٹ ساز فیکٹریوں کو اس زیر زمین پانی کی ادائیگی کرنا ہوگی جو وہ استعمال کررہی ہیں۔ اسلام آباد میں سیمنٹ ساز فیکٹریوں سے متعلق مقدمے کی سماعت کرتے ہوئے انہوں نے ریمارکس دئیے کہ زیر زمین پانی انتہائی قیمتی ہے جنہیں صنعتیں بلا قیمت استعمال کر رہی ہیں، تاہم یہ پانی اب ان کیلئے مفت دستیاب نہیں ہوگا۔ منرل واٹر فروخت کرنیوالی اداروں کی طرف سے زیر زمین پانی کے استعمال کا نوٹس لیتے ہوئے چیف جسٹس نے پنجاب فوڈ اتھارٹی کو ہدایت کی کہ وہ ان تمام کمپنیوں سے رپورٹ طلب کرے کہ وہ کتنا پانی استعمال کررہی ہیں اور اس کیلئے کتنی رقم ادا کر رہی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

one + 18 =