دی بیلٹ اینڈ روڈ میں ہوائی نقل و حمل کا روشن مستقبل!

دی بیلٹ ایند روڈ انیشیٹو پیش کئے جانے کے بعد گزشتہ پانچ برسوں میں چین اور دنیا کے دوسرے ممالک کے درمیان اقتصادی و تجارتی تبادلوں میں نمایان اضافہ ہوا ہے۔ اس دوران ہوائی نقل و حمل کا کردار بہت زیادہ اہمیت کا حامل رہا ہے۔ اس سے ہر لحاظ سے چین کے کھلے پن کو مدد ملی ہے۔
گیارہ آگست کو چین کے صوبہ زے جیانگ کی جانب سے دیگر براعظم تک سازوسامان کی نقل و حمل کے لئے ہوائی پروازوں کے آغاز کی پہلی سالگرہ ہے۔ ہانگ جو شہر سے روس کے شہر نواسبرسک تک کے روٹ پر گزشتہ ایک سال میں ایک سو باون پروازوں کے ذریعے ایک کروڑ چھہتر لاکھ چالیس ہزار پارسل اور دیگر ڈاک بھیجی گئیں۔ اس طرح یہ کہا جا سکتا ہے کہ ہانگ جو- نواسبرسک کے درمیان ہوائی پرواز کے آغاز کے بعد چین کے صوبہ زے جیانگ سے روس تک سازوسامان کی نقل وحمل کے کاروبار کی ترقی کی رفتار تیز تر ہو گئی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

five × two =