اقوام متحدہ کی ساحلی خطے میں خوراک کے بدترین بحران کی تنبیہ!

اقوام متحدہ نے ساحلی خطے میں خوراک کے بدترین بحران سے خبردار کیا ہے۔ اقوام متحدہ کے امدادی ادارے کے سربراہ مارک لوکاک نے بتایا ہے کہ برکینیا فاسو، چاڈ، مالے، موریطانیہ اور سینگال کے تقریبا 60 لاکھ افراد خوراک کے حصول کیلئے جدوجہد کررہے ہیں جہاں 16 لاکھ بچے غذائی قلت کا شکار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ لاکھوں افراد کیلئے خوراک کی پہلے ہی قلت ہے جہاں لوگ اپنے کھانے میں کمی کررہے ہیں بچوں کو سکولوں سے نکال رہے ہیں اور خوراک کیلئے رقم بچانے کی غرض سے ضروری علاج معالجے پر توجہ نہیں دے رہے۔ اقوام متحدہ کے امدادی ادارے کے سربراہ نے خطے میں امدادی اقدامات تیزکرنے کیلئے امداد فراہم کرنیوالے ممالک سے تعاون کی اپیل کی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

3 × 5 =